سرخ پرچم کو عورت اُٹھائے گی اب

imagesگیت محنت کی عظمت کے گائے گی اب
سرخ پرچم کو عورت اُٹھائے گی اب

یہ وڈیرے جو ظلم اس پہ ڈھاتے رہے
اُن کی دستار ٹھوکر پہ لائے گی اب

زر پرستوں کے دل خوف کھانے لگیں
کام ایسے بھی کر کے دکھائے گی اب

اونچے محلوں کی زینت بڑھاتی رہی
اپنے آنگن کو جنت بنائے گی اب

اہلِ مذہب رکاوٹ بنے بھی اگر
وہ قدم اپنے آگے بڑھائے گی اب

کیوں صلہ اس کو محنت کا آدھا ملے
ہاتھ حق کے لیے وہ اٹھائے گی اب

ہوں گے مِلوں کے مالک یہ مزدور سب
اس کے لب سے صدا یہ ہی آئے گی اب

سرخ پرچم کو تھامے ہوئے ہاتھ میں
سوئے منزل ہمیں لے کے جائے گی اب

آج طاہرؔ کو عورت سے امید ہے
رہبری ہم کو کر کے دکھائے گی اب

ڈاکٹر طاہرؔ شبیر

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s